شہریوں کو گھروں تک محدود کرنے کیلئے پنجاب حکومت کا مکمل لاک ڈاؤن کا فیصلہ 54

شہریوں کو گھروں تک محدود کرنے کیلئے پنجاب حکومت کا مکمل لاک ڈاؤن کا فیصلہ

کورونا سے زیادہ متاثر ہونے والے علاقوں کو سیل ‘ شہروں کو مختلف زونز میں تقسیم کیا جائے گا، ایک زون سے دوسرے زون میں جانے کی اجازت نہیں ہوگی
شہریوں کو گھروں تک محدود کرنے کیلئے پنجاب حکومت نے نئی حکمت عملی بنا لی. بتایا گیا ہے کہ شہریوں کی جانب سے حکومتی اقدامات نہ ماننے اور غیر ضروری طور پر نقل و حرکت رکھنے کیخلاف اقدامات اٹھانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ پنجاب حکومت نے مکمل لاک ڈآؤن پر غور شروع کر دیا ہے۔ پنجاب حکومت صوبہ بھر کے شہروں کو مختلف زونز میں تقسیم کرے گی۔
جن زونز میں زیادہ کیسز رپورٹ ہونگے انہیں مکمل طور پر سیل کر دیا جائے گا۔ زونز کی تقسیم ٹاونز کی بنیاد پر ہوگی۔ شہری ایک زون سے دوسرے زون میں داخل نہیں ہو سکیں گے۔ پنجاب حکومت کی جانب سے رواں ہفتے بڑے فیصلے پر عمل درآمد کیا جائے گا۔ بتایا گیا ہے کہ حکومت کی جانب سے بڑا فیصلہ عوام کی نقل وحرکت کو محدود کرنے کیلئے کیا گیا ۔
ساتھ ہی ساتھ شہری حکومتی اقدامات کو ہوا میں اُڑاتےنظر آتے ہیں۔

کہا گیا ہے نئی حکمت عملی سے کورونا وائرس کیسز میں مزید کمی آئے گی۔ واضح رہے کہ ملک بھر میں لاک ڈاؤن کے باعث محکمہ ریلوے کا ملک بھر میں ٹرین سروس بند کرنے کا اعلان کردیا تھا ۔ محکمے کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ کورونا وائرس کے پھیلاؤ سے بچنے اور صوبوں میں لاک ڈاؤن کی وجہ سے ٹرین سروس بند کی جارہی ہے۔ واضح رہے کہ اس سے قبل وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید کا کہنا تھا کہ امکان ہے کہ تمام ٹرینوں کو لاک ڈاؤن کر دیں ۔
نجی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے شیخ رشید کا کہنا تھا کہ ایک سے دو گھنٹے میں فیصلہ کر لیں گے، میں وزیرا عظم عمران خان کے ساتھ میٹنگ میں موجود ہوں۔ عمران خان کو اعتماد میں لے کر تمام ٹرینیں بند کر دیں گے ۔ شیخ رشید کا کہناتھا کہ 40 ٹرینین بند کی جا چکی جبکہ 142 ٹرینیں ابھی بھی ٹریک پر ہیں۔ 2لاکھ سے زائد مسافر ہیں اگر ٹرینیں جاری بھی رکھیں تو 25 کروڑ روپے روز ادا کرنا پڑیں گے۔ اگر ہم ابھی ٹرین سروس بند کرنے کا فیصلہ کریں گے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں