اسحاق ڈارکاعدالت جانے کا اعلان 170

اسحاق ڈارکاعدالت جانے کا اعلان

اسحاق ڈارکا اپنی رہائشگاہ کو پناہ گاہ میں تبدیل کرنے کے خلاف عدالت جانے کا اعلان
میرے خلاف سارا کیس فراڈ اور بدنیتی پر مبنی ہے،گذشتہ 36 سال سے میری ایک ایک ٹیکس ریٹرن کی رسیدیں دستیاب ہیں۔ اسحاق ڈار
پنجاب حکومت نے سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈارکی رہائشگاہ کو پناہ گاہ میں تبدیل کر دیا۔بتایا گیا ہے کہ سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈارکے گلبرگ تھری میں واقعہ 4 کنال 17مرلے پر مشتمل گھر میں بیڈز لگا دئیے گئے ہیں اور ایک وقت میں 40 افراد رہائش رکھ سکیں گے۔تاہم اب اسحاق ڈار نے بھی پنجاب حکومت کی جانب سے اپنی رہائشگاہ کو اپناہ گاہ میں تبدیل کرنے کے فیصلے کے خلاف عدالت جانے کا اعلان کیا ہے۔انہوں نے ایک ویڈیو پیغام میں اس فیصلے کی مذمت کرتے ہوئے اسے وزیراعظم اور پنجاب حکومت کا گٹھ جوڑ قرار دے دیا،اسحاق ڈار نے کہا کہ پنجاب حکومت کی جانب سے لاہور میں 1988ء سے واقع میری رہائشگاہ کو بے گھر لوگوں کے لیے وقف کرنا توہین عدالت ہے۔
کیونکہ اسلام آباد ہائیکورٹ نے 27 جنوری کو اس کیس میں حکم امتناع جاری کیا تھا۔سابق وزیرخزانہ نے کہا حکومت کی جانب سے توہین عدالت پر ہم اسلام آباد ہائیکورٹ میں جائیں گے۔


اسحاق ڈار نے مزید کہا کہ حکومت نے بتایا کہ حکومت نے یہ تمام اقدامات مفرور ہونے پر لیے ہیں لیکن بنیادی طور پر مفرور ہونے کا فیصلہ بھی غیر قانونی ہے کیونکہ اس حوالے سے سپریم کورٹ میں ہماری درخواست موجود ہے۔جب حکومت نے میری رہائشگاہ کو نیلامی کا فیصلہ کیا تھا تو ہم نے درخواست دائر کی تھی۔سریم کورٹ کا موقف ہے کہ اپنی باری پر درخواست پر سماعت کی جائے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں