حکومت اور اپوزیشن میں چیف الیکشن کمشنر کے ناموں پر اتفاق 184

حکومت اور اپوزیشن میں چیف الیکشن کمشنر کے ناموں پر اتفاق

اسلام آباد: حکومت اور اپوزیشن میں چیف الیکشن کمشنر اور الیکشن کمیشن کے 2 ارکان کے ناموں پر اتفاق ہوگیا۔الیکشن کمیشن ممبران و چیف الیکشن کمشنر کی تقرری کے لیے حکومت اور اپوزیشن کے درمیان اسپیکر آفس میں مذاکرات ہوئے۔ اپوزیشن نے چیف الیکشن کمشنر کے لیے 3 افراد ناصر کھوسہ،اخلاق تارڑ اور عرفان قادر کے نام پیش کیے۔وزیراعظم کا اپوزیشن لیڈر کو خط، چیف الیکشن کمشنر کے لیے 3 نئے نام تجویز
چیف الیکشن کمشنر اور الیکشن کمیشن ممبران کے نام فائنل ہوگئے۔ چیف الیکشن کمشنرکے لئے حکومت کے تجویز کردہ سکندر سلطان راجہ کے نام پر اتفاق ہوگیا۔ بلوچستان اور سندھ سے کمیشن کے ارکان کے لئے اپوزیشن کے تجویز کردہ نام طے ہوگئے ہیں۔ ممبر سندھ کے لیے نثار درانی اور ممبر بلوچستان کے لیے شاہ محمد جتوئی کے نام پر اتفاق ہوگیا ہے۔وزیراعظم عمران خان کی حتمی منظوری کے بعد پارلیمانی کمیٹی کل اعلان کریگی۔ اپوزیشن نے کہا ہے کہ کل ناموں کو حتمی شکل دی جائے گی اور فیصلے کا اعلان پارلیمانی کمیٹی میں کیا جائیگا۔

اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مشاہد اللہ خان نے کہا کہ آج بھی چیف الیکشن کمشنر اور دو ممبران کی تقرری کا معاملہ طے نہ ہو سکا لیکن ہم نے 95 فیصد پیشرفت کر لی، اب چیف الیکشن کمشنر کے لئے 6 نام زیر غور ہیں، امید ہے کل ان میں سے کسی ایک نام پر اتفاق رائے ہو جائے گا۔
قبل ازیں اپوزیشن لیڈرشہباز شریف نے چیف الیکشن کمشنر کے تقرر کیلئے وزیراعظم عمران خان کو خط لکھ کر ناصر کھوسہ،اخلاق تارڑ اور عرفان قادر کے نام تجویز کردیے۔ شہباز شریف نے خط میں کہا کہ آئین کے تحت اپنی ذمہ داری کا احساس کرتے ہوئے چیف الیکشن کمشنر کی تقرری کے لئے 25 نومبر کو مشاورت کے عمل کا آغاز کیا، چیف الیکشن کمشنر کی تقرری کے لئے جلد اتفاق رائے پیدا کیا جائے تاکہ عدالتی فیصلوں پر عملدرآمد کیا جا سکے۔وزیراعظم عمران خان نے بھی چیف الیکشن کمشنر کے لیے 3 نئے نام تجویز کردیے ہیں جن میں جمیل احمد، فضل عباس میکن اور سکندر سلطان راجہ شامل ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں