ایم کیو ایم کے رہنما خالد مقبول صدیقی نے ایک خاتون کی وزارت میں مداخلت پر استعفیٰ دیا 176

ایم کیو ایم کے رہنما خالد مقبول صدیقی نے ایک خاتون کی وزارت میں مداخلت پر استعفیٰ دیا

خالد مقبول صدیقی کے وزارت سے مستعفی ہونے کی وجہ سامنے آ گئی
ایم کیو ایم رہنما نے ڈیجیٹل پاکستان کی سربراہ تانیہ ادرس کی وزارت میں مداخلت پر استعفیٰ دیا
وفاقی حکومت کے اتحادیوں نے اختیارات نہ ملنے اور دیگر وجوہات کی بنا پر تنگ آکر پیچھے ہٹنا شروع کر دیا ہے۔خالد مقبول صدیقی کا شمار بھی پی ٹی آئی کے اُن اتحادی وزراء میں ہوتا ہے جو اپنی وزارت سے ناخوش تھے۔
بتایا گیا ہے کہ خالد مقبول صدیقی گوگل چھوڑ کر پاکستان آنے والی اور حکومت کے ساتھ مل کر پاکستان کو ڈیجیٹل دنیا کا ایک بڑا نام بنانے کی کوششیں کرنے والی ڈیجیٹل پاکستان پروگرام کی سربراہ تانیہ ادرس کی مسلسل مداخلت کے باعث وزارت سے مستعفی ہوئے۔خالد مقبول صدی اپنی وزارت میں خود کو ہی اجنبی محسوس کرنے لگے تھے۔

خالد مقبول صدیقی کا کہنا تھا کہ ہم نے حکومت سے کیا گیا اپنا وعدہ پورا کیا، ہم بہت انتظار کرتے رہے کہ حکومت کی کچھ مصروفیات ہو سکتی ہے، لیکن ہمارے ایک نکتے پر بھی پیش رفت نہیں ہوئی، ہمارا حکومت سے تعاون برقرار رہے گا لیکن میرا وزارت میں بیٹھنا بہت سارے سوالات کو جنم دیتا ہے۔ میرا اب کابینہ میں بیٹھنا بے سود ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں