زینب الرٹ بل قومی اسمبلی میں منظور کر لیا گیا 216

زینب الرٹ بل قومی اسمبلی میں منظور کر لیا گیا

قومی اسمبلی کے اجلاس میں حکومت نے 6 آرڈیننسز واپس لے لیے جبکہ ایوان نے 5 قوانین کی کثرت رائے سے منظوری دے دی۔

اسپیکر اسد قیصر کی زیر صدارت قومی اسمبلی کا اجلاس ہوا جس میں حکومت اور اپوزیشن میں اتفاق رائے کا غیر معمولی مظاہرہ ہوا
ایجنسی کا نام ننھی زینب کے نام سے منسوب ہو گا ، جس کا نام زینب الرٹ ریسپونس اینڈ ریکوری (ZARRA) ہو گا۔اس ایجنسی کو بنانے کا مقصد پاکستان میں برھتی ہوئی جنسی زیادتی کو روکنا ہے۔واضح رہے کہ پاکستان میں جنسی زیادتی اور بچوں کے ساتھ زیادتی کے بے شمار واقعات سامنے آتے ہیں،کچھ پر کاروائی ہوتی ہے کچھ پر نہیں۔

دو سال قبل قصور میں بھی ایسا ہی دل دہلادینے والاواقعہ پیش آیا جس پر پوری قوم ایک ہو گئی اور زینب کے لئے سڑکوں پر نکل آئی۔

نون لیگ کی حکومت میں پیش آنے والے یہ واقع نے پوری قوم کو متحد کر دیا اور ہرکوئی صرف زینب کے بارے میں بات کر رہا تھا۔یاد رہے کہ دو سال آج ہی کہ دن قصور میں ننھی زینب کی لاش ملی تھی جسے زیادتی کے بعد مار کر پھینک دیاگیا تھا۔یہ واقع اس وقت پیش آیا جب زینب کے والدین عمرے کی سعادت حاصل کرنے گئے ہوئے تھے۔ آج دو سال گزر جانے کے بعد اس جرم کو کم کرنے کے لئے کسی قانون کو بنایا گیا ہے جس سے ہمارے ملک کے قانونی نظام پر تھپڑ ہے جو کہ کسی ایکٹ میں ترمیم 4 دنوں میں کروا لیتی ہے لیکن ملک کے بچوں کے تحفظ کے لئے قانون بنانے میں اسے 2 سال لگ جاتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں