امریکانےایرانی وزیرخارجہ کواقوام متحدہ کی سلامتی کونسل سےخطاب سےروک دیا۔ 201

ایرانی وزیرخارجہ جواد ظریف کو امریکی ویزہ دینے سے بھی روک دیا،امریکا نے ایرانی وزیرخارجہ کو اقوام متحدہ میں خطاب سےروک دیا

یران دفتر خارجہ کی جانب سے اس عمل کی شدید مذمت کی جا رہی ہے۔واضح رہے کہ متوقع طور پر جواد ظریف نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں جنرل قاسم سلیمانی کے قتل پر مذمتی بیان جمع کروانا تھا ۔ امریکہ کی جانب سے انہیں خطاب میں شرکت سے ہی روک دینا ایک قابل تشویش عمل ہے۔واضح رہے کہ کچھ دن قبل امریکہ نے بغداد میں ایک فضائی حملے میں ایرانی قدس جوج کے سربراہ قاسم سلیمانی کو مار دیا تھا جس کے بعد ایران امریکہ کشیدگی کے معاملات نے پورے خطے کی توجہ اپنی طرف مرکوز کی ہوئی ہے۔

دھر اقوام متحدہ کےسیکریٹری جنرل انتونیوگوٹیریس نے عالمی کشیدگی میں اضافےپراظہارتشویش کرتے ہوئے کہا ہے کہ نئےسال کاآغازہماری دنیا میں ہنگامہ خیزی سےہواہے، ہم ایک خطرناک دورمیں زندگی گزاررہےہیں، جنگوں سےاجتناب ہم سب کی مشترکہ ذمےداری ہے، میرا سادہ اورواضح پیغام ہےکہ کشیدگی ختم کریں اور تحمل کامظاہرہ کریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں