ایرانی جنرل قاسم سلیمانی کی نماز جنازہ میں بھگدڑ مین 35 افراد جاں بحق 48 زخمی ہو گئے۔ 205

ایرانی جنرل قاسم سلیمانی کی نماز جنازہ میں بھگدڑ میں 50 شرکا جاں بحق،213 زخمی ہو گئے۔

تہران: ایرانی جنرل قاسم سلیمانی کے آبائی شہر کرمان میں جنازے کے جلوس میں بھگدڑ مچنے سے 50 شرکا جاں بحق،213 سے زائد زخمی ہوگئے۔
ایرانی میڈیا کے مطابق ایرانی کے صوبے کرمان میں جنرل قاسم سلیمانی کی نماز جنازہ میں بھگدڑسے 35 افراد جاں بحق 48 زخمی ہو گئے ۔ بتایا گیا ہے کہ نمازہ جنازہ کے دوران بھگڈر مچ گئی جس سے کئی افراد ایک دوسرے پر گرے اور 50 شرکا جاں بحق،213 زخمی ہو گئے۔
تہران میں ایرانی القدس فورس کے کمانڈر جنرل قاسم سلیمانی اور ساتھیوں کی نمازہ جنازہ سپریم لیڈر آیت اللہ خامنہ ای کی امامت میں ادا کر دی گئی ۔

نمازِ جنازہ میں ایرانی صدر حسن روحانی سمیت اعلیٰ حکومتی اور سماجی شخصیات نے شرکت کی تھی ۔ قاسم سلیمانی کے نمازِ جنازہ میں لاکھوں افراد نے شرکت کی۔نماز جنازہ کے لیے ایران کا بڑا ہجوم دو شہروں کی سڑکوں پر آ گیا۔

لوگوں کی ایک بڑی تعداد نے شہر کی اہم سڑکوں اور دریائے کارون پر ایک لمبا پل پار کیا۔اس موقع پر لوگ 30کلومیٹر کے فاصلے تک پھیلے ہوئے تھے۔کالے رنگ کے کپڑوں میں ملبوس خواتین اور مردوں نے قاسم سلیمانی کی تصاویر اور جھنڈے اٹھا رکھے تھے۔ شرکاء نے امریکا مردہ باد کے نعرے بھی لگائے۔اس موقع پر سوگواران شدت غم سے نڈھالا نظر آئے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں