ایران القدس کمانڈر قاسم سلیمانی پر حملہ امریکہ نے ذمہ داری قبول کر لی 198

ایران القدس کمانڈر قاسم سلیمانی پر حملہ امریکہ نے ذمہ داری قبول کر لی

بغداد: ایئرپورٹ پرامریکا کی جانب سے راکٹ حملوں میں ایرانی جنرل سمیت 8 افراد ہلاک ہوگئے۔
عراقی حکام کے مطابق بغداد ایئرپورٹ پرداغے گئے 3 راکٹ کارگوہال کے قریب گرے، راکٹ حملے سے 2 کاروں کوآگ بھی لگی۔ عرب ٹی وی کے مطابق راکٹوں سے اہم مہمانوں کوایئرپورٹ لانے والی گاڑیاں تباہ ہوئیں، راکٹ حملے سے قبل سائرن بجے، فضا میں ہیلی کاپٹراڑتے دیکھے گئے۔

پینٹاگون نے ایک بیان میں کہا ہے کہ “صدر کی ہدایت پر، امریکی فوج نے قاسم سلیمانی کو ہلاک کرکے بیرون ملک امریکی اہلکاروں کے تحفظ کے لئے فیصلہ کن دفاعی کارروائی کی ہے” ان کا مزید کہنا ہے کہ “اس اسٹرائیک کا مقصد آئندہ کے ایرانی حملے کے منصوبوں کی روک تھام تھا” مزید یہ کہ امریکہ پوری دنیا میں اپنے شہریوں کے مفادات کے تحفظ کے لئے ضروری کارروائیاں جاری رکھے گا۔

پینٹاگون کے بیان میں کہا گیا ہے کہ قاسم سلیمانی نے گذشتہ چند مہینوں کے دوران عراق میں اتحادیوں کے ٹھکانوں پر حملوں کو “منظم” کیا اور اس ہفتے کے شروع میں بغداد میں امریکی سفارت خانے پر “حملوں” کی منظوری دی۔ واضح رہے کہ آج بروز جمعہ بغداد ایئرپورٹ پر ایک راکٹ حملہ ہوا جس میں عراق کی پاپولرموبائلائزیشن فورس نے حملے میں اپنے 5 افراد کی موت کی تصدیق کی ہے۔
حملے میں ایران کی القدس فورس کے سینئر کمانڈر جاں بحق ہوئے ہیں جن میں قاسم سلیمانی اور ابو مہدی المہندس بھی شامل ہیں۔ پاپولر موبیلائزیشن فورس کی جانب سے حملے کا الزام امریکہ پر عائد کرنے کے بعد روس نے بھی اپنے رد عمل میں امریکہ پر الزام عائد کیا ہے۔ روسی خبرایجنسی کے مطابق روس نے اس حملے سے متعلق اپنا رد عمل دیتے ہوئے الزام عائد کیا ہے کہ امریکا نے بغداد ایئرپورٹ کے قریب دو اہداف کو نشانہ بنایا تھا۔ میجرجنرل قاسم سلیمانی کوامریکا نے راکٹ حملے کا نشانہ بنایا۔ بغداد ایئرپورٹ کے قریب ہونے والے راکٹ حملے میں ایران کی القدس فورس کے کمانڈرجاں بحق ہوئے ہیں۔ تاہم اب امریکہ کی جانب سے باقاعدہ اس حملے کی ذمہ داری قبول کر لی گئی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں