مریم اورنگزیب اور خواجہ آصف کی گرفتاری کا امکان 203

مریم اورنگزیب اور خواجہ آصف کی گرفتاری کا امکان لندن میں موجود اعلیٰ قیادت کو نشانے پر موجود رہنماؤں سے آگاہ کر دیا گیا،ایاز صادق بھی ہٹ لسٹ پر

پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما احسن اقبال کی گرفتاری کے بعد ن لیگ کے اہم رہنماؤں کی گرفتاری کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔قومی اخبار کی رپورٹ کے مطابق نیب کے بعد ایف آئی اے نے بھی اپوزیشن رہنماؤں بالخصوص ن لیگ سے جڑی شخصیات کو طلب کرنا شروع کر دیا ہے۔اس وجہ سے کئی رہنماؤں میں خوف کی لہر دوڑ گئی ہے جو پہلے ہی ٹی وی سکرینوں سے غائب ہو چکے ہیں۔
ممکنہ گرفتاری سے بچنے کے لیے پہلے کی طرح ٹاک شوز میں بھی شرکت نہیں کرتے۔لندن میں موجود لیگی قیادت کو “ہٹ لسٹ” سے آگاہ کر دیا ہے جہیں مستقبل میں گرفتار کیا جا سکتا ہے،ان میں خواجہ آصف،مریم اورنگزیب،جاوید لطیف،سردار ایاز صادق، عظمیٰ بخاری ،خرم دستگیر،رانا تنویز اور محسن رانجھا شامل ہیں۔
واضح رہے کہ گذشتہ روز وفاقی تحقیقاتی ایجنسی ( ایف آئی اے ) کی ٹیم نے پاکستان مسلم لیگ (ن) کے مرکزی سیکرٹریٹ 180ایچ ماڈل ٹائون میں چھاپہ مارکر ایک کمپیوٹرکی ہارڈ ڈسک سمیت دیگر سامان قبضے میں لے لیا ،پارٹی سیکرٹریٹ پر چھاپے کی اطلاع ملنے پر لیگی رہنما عطا اللہ تارڑ،خواجہ عمران نذیرنذیر سمیت دیگر ماڈل ٹائون پہنچ گئے ۔

بتایا گیا کہ جج ارشد ملک کے کیس میں اسسٹنٹ ڈائریکٹر اعجاز شیخ سمیت دیگر پر مشتمل ایف آئی اے کی اسلام آباد سے آئی ہوئی سات رکنی ٹیم نے لاہور کی ٹیم کے ہمراہ مسلم لیگ (ن) کے مرکزی سیکرٹریٹ 180 ایچ ماڈل ٹائون میں چھاپہ مار کر ایک کمپیوٹر کی ہارڈ ڈرائیور اور دیگر سامان اپنے ساتھ لے گئے ۔مسلم لیگ ن کے رہنما عطا اللہ تارڑ نے چھاپے کی تفصیلات سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ ایف آئی اے نے چھاپے کے دوران مسلم لیگ ن کے ملٹی میڈیا سیل کا سامان قبضے میں لے لیا ہے۔
نہوں نے آگاہ کیا کہ ایف آئی اے نے مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز کی پریس کانفرنس کے حوالے سے ریکارڈ قبضے میں لینے کے لیے چھاپہ مارا ۔ایف آئی اے نے ایک کمپیوٹر کی ہارڈ ڈسک بھی قبضے میں لی ہے ان کے پاس جج ویڈیو کیس کے حوالے سے وارنٹ موجود تھا۔انہوں نے کہا کہ لیگی رہنمائوں کو ایف آئی اے کی جانب سے طلبی کے نوٹس موصول ہو چکے تھے ،یہ عمران نیاز ی حکومت کا اوچھا ہتھکنڈا یہ فسطائیت کی مثال ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں