بلوچستان حکومت کوگرانے کا پلان تیار کر لیا گیا 190

بلوچستان حکومت کوگرانے کا پلان تیار کر لیا گیا

ے یو آئی ف اور بی این پی حکومت مخالف اتحاد کیلئے سرگرم ہو گئی، دونوں جماعتوں کے سپیکر بلوچستان اسمبلی عبدالقدوس بزنجو سے بیک ڈور رابطے
بلوچستان حکومت کوگرانے کا پلان تیار کر لیا گیا۔تفصیل کے مطابق بتایا گیا ہے کہ جے یو آئی ف اور بی این پی نے بلوچستان حکومت کو گرانے کا پلان تیار کر لیا ہے۔ جے یو آئی ف اور بی این پی حکومت مخالف اتحاد کیلئے سرگرم ہو گئی، دونوں جماعتوں کے سپیکر بلوچستان اسمبلی سے بیک ڈور رابطوں کا انکشاف ہوا ہے۔
رپورٹ کے مطابق جے یو آئی (جمعیت علماء اسلام )ف اور بی این پی (بلوچستان نیشنل پارٹی )حکومت مخالف اتحاد کیلئے سرگرم ہو گئی، دونوں جماعتوں کے سپیکر بلوچستان اسمبلی سے بیک ڈور رابطوں کا انکشاف ہوا ہے۔ دوسری طرف یہ دعویٰ بھی سامنے آیا ہے کہ وفاق پر حکومت کرنے والی پارٹی تحریک انصاف کے اراکین بھی وزارتیں چھین لینے سے وزیراعلیٰ بلوچستان سے ناراض نظر آتے ہیں۔
واضح رہے سپیکر بلوچستان اسمبلی عبدالقدوس بزنجو اپنی ہی پارٹی کے خلاف کھل کر سامنے آچکے ہیں۔ حال ہی میں ان کا کہنا تھا کہ جام کمال ایک اچھے انسان ہیں تاہم ایک اچھے وزیراعلیٰ ثابت نہ ہوسکے۔ لوگ بلوچستان عوامی کو عوام کی نمائندہ جماعت نہیں سمجھ رہے اس پارٹی کو صرف ایک شخص کی وجہ سے خراب نہیں ہونے دیں گے اس پارٹی کو ہم مضبوط کریں گے،اپوزیشن ساتھ مل کر کوئی سازش نہیں کررہاہماری اپنی جماعت ہے ہمارا اپنا منشور ہییہ بات انہوں نے جمعرات کوگورنر ہاؤس کوئٹہ میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے کہ وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان اچھے انسان ہیں لیکن وہ صوبے کیلئے اچھے وزیراعلیٰ ثابت نہیں ہوسکے ڈیڑھ سال تک خاموش رہا لیکن حکومت کی بہتری نظر نہ آئی ہم نے یہ پارٹی عوامی مسائل کو حل کرنے کیلئے بنائی تھی لیکن صوبے میں نہ تو کوئی مسائل حل ہوئے بلکہ لوگوں سے ان کا روزگار بھی چھینا جارہاہے۔ تاہم اب کہا جا رہا ہے کہ جے یو آئی ف اور بی این پی حکومت مخالف اتحاد کیلئے سرگرم ہو گئے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں