پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا امکان 205

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا امکان پٹرول کی فی لیٹر قیمت میں 2 سے 3 روپے، لائٹ ڈیزل کی فی لیڑ قیمت میں ساڑھے 3 روپے اضافے کا امکان

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا امکان
پٹرول کی فی لیٹر قیمت میں 2 سے 3 روپے، لائٹ ڈیزل کی فی لیڑ قیمت میں ساڑھے 3 روپے اضافے کا امکان
پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ایک بار اضافے کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔میڈیا رپورٹ کے مطابق پٹرول کی فی لیٹر قیمت میں 2 سے 3 روپے جب کہ لائٹ ڈیزل کی فی لیڑ قیمت میں ساڑھے 3 روپے اضافے کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔عوام کا کہنا ہے کہ جب سے تبدیلی سرکار برسر اقتدار آئی ہے عوام کے لیے پریشانیوں کا باعث بنی ہوئی ہے۔
اب حکومت کی جانب سے عوام کے لیے نئے سال کا تحفہ پٹرول مہنگا کر کے دیا جا رہا ہے۔اس سے قبل وزارتِ خزانہ نے یکم دسمبر سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کی منظوری دی تھی۔ وزارتِ خزانہ کے مطابق پٹرول 25 پیسے فی لیٹر جبکہ مٹی کا تیل 83 پیسے فی لیٹر جبکہ ہائی سپیڈ ڈیزل 2روپے40پیسے فی لیٹر سستا کردیا گیا ہے۔
جس کے بعد پٹرول کی قیمت 113روپے99پیسے کردی گئی ۔

ہائی سپیڈ ڈیزل کی قیمت 2روپے40پیسے کم کرکے 125روپے فی لیٹر کر دی گئی تھی/ وزارتِ خزانہ نے لائٹ ڈیزل آئل 2روپے90پیسے فی لیٹر کم کر کے 82روپے43پیسے کردی گئی ۔ مٹی کا تیل 83پیسے سستا ہوا ہے، جس کے بعد اس کی قیمت96روپے35پیسے کردی گئی ہے۔ وزارتِ خزانہ کے مطابق پٹرولیم مصنوعات کی قیمت کا تعین 17فیصد جی ایس ٹی کی بنیاد پر کیا گیا ۔ آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) نے ماہ دسمبر کیلئے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں کے تعین کیلئے قیمتوں پر نظرثانی کی سمری پٹرولیم ڈویژن کو ارسال کی تھی، پٹرولیم کے سیکٹر ڈویلپمنٹ کے ذرائع نے ’’اے پی پی‘‘ کو بتایا کہ سمری کے مطابق اوگرا نے لائٹ ڈیزل آئل (ایل ڈی او) کی فی لٹر قیمت میں 2 روپے 90 پیسے (3.4 فیصد)، ہائی سپیڈ ڈیزل میں 2 روپے 40 پیسے (1.9 فیصد)، پٹرول کی قیمت میں 25 پیسے (0.2 فیصد) اور مٹی کے تیل کی قیمت میں 83 پیسے (0.9 فیصد) کمی کی تجویز دی تھی جو منظور کر لی گئی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں