نسیم شاہ ٹیسٹ کرکٹ میں 5 وکٹیں حاصل کرنےوالے کم عمر ترین فاسٹ باﺅلر بن گئے 197

نسیم شاہ ٹیسٹ کرکٹ میں 5 وکٹیں حاصل کرنےوالے کم عمر ترین فاسٹ باﺅلر بن گئے

نسیم شاہ ٹیسٹ کرکٹ میں 5 وکٹیں حاصل کرنےوالے کم عمر ترین فاسٹ باﺅلر بن گئے
نوجوان فاسٹ باﺅلر نے یہ کارنامہ 16 سال 311 دنوں میں انجام دیا
قومی ٹیم کے نوجوان فاسٹ بولر نسیم شاہ ٹیسٹ کرکٹ کی ایک اننگز میں 5 وکٹیں حاصل کرنے والے دنیا کے کم عمر ترین فاسٹ باﺅلر بن گئے۔نسیم شاہ نے سری لنکا کے خلاف کراچی ٹیسٹ کی دوسری اننگز میں 12 اعشاریہ 5 اوورز میں 31 رنز دیکر 5 کھلاڑیوں کو آوٹ کر کے قومی ٹیم کی فتح میں اہم کردار ادا کیا۔نسیم شاہ نے سری لنکا کے وشوا فرنینڈو کو ایل بی ڈبلیو کیا تو یہ ان کی پانچویں اور سری لنکا کی آخری وکٹ تھی۔
نسیم شاہ ٹیسٹ کرکٹ کی ایک اننگز میں 5 وکٹیں لینے والے دنیا کے دوسرے کھلاڑی اور پہلے کم عمر ترین فاسٹ بولر بن گئے۔نوجوان فاسٹ باﺅلر نے یہ کارنامہ 16 سال 311 دنوں میں انجام دیا، اس سے قبل یہ اعزاز بنگلا دیش کے شہادت حسین کو حاصل تھا جنہوں نے 17 سال 213 دنوں میں یہ اعزاز حاصل کیا تھا۔

دنیا کے سب سے کم عمر 5 وکٹیں لینے والے کھلاڑی کا تعلق بھی پاکستان سے ہی ہے۔

پاکستان کے سابق سپنر نسیم الغنی نے یہ اعزاز ویسٹ انڈیز کے خلاف1958ءمیں 16 سال 308 روز میں حاصل کیا تھا لیکن وہ لیفٹ آرم سپنر تھے۔یاد رہے کہ قومی ٹیم13سال بعد ہوم گراﺅنڈ پر ٹیسٹ سیریز جیتنے میں کامیاب رہی اور اس نے سری لنکا کو کراچی ٹیسٹ میں263رنز سے شکست دیدی۔نیشنل سٹیڈیم، کراچی میں کھیلی جارہی سیریز کے دوسرے اور آخری ٹیسٹ میچ کے چوتھے دن پاکستانی ٹیم نے 385 رنز دو کھلاڑی آﺅٹ سے اپنی دوسری نامکمل اننگز دوبارہ شروع کی کپتان اظہر علی 57 اور بابر اعظم 22 رنز بنا کر کریز پر موجود تھے۔
اظہر علی ایک عرصے بعد بھرپور فارم میں نظر آئے اور بیٹنگ کےلئے سازگار وکٹ پر سنبھل کر بیٹنگ کرتے ہوئے اپنی سنچری مکمل کی۔قومی ٹیم کے کپتان 118 رنز بنا کر لاستھ ایمبل ڈینیا کی گیند پر آﺅٹ ہوگئے۔اظہر علی کے آﺅٹ ہونے کے بعد دوسرے اینڈ پر موجود بابر اعظم نے محمد رضوان کے ساتھ سکور کو آگے بڑھاتے ہوئے سری لنکا کے خلاف دوسری اننگز میں سنچری سکور کی اور دوسری اننگز میں سنچری بنانےوالے چوتھے کھلاڑی تھے۔
پاکستان نے کھانے کے وقفے پر 555 رنز 3کھلاڑی آﺅٹ ہر اپنی دوسری نامکمل اننگز ڈکلیئر کی تو بابر اعظم سنچری جبکہ محمد رضوان 21 رنز بنا کر ناٹ آﺅٹ رہے۔ایک بڑے ہدف کے تعاقب میں اوپنرز دمتھ کرونارتنے اور اوشادا فرنینڈو نے دوسری اننگز میں اپنی ٹیم کو 39رنز کا آغاز فراہم کیا لیکن اس مرحلے پر محمد عباس کی گیند پر سری لنکن کپتان کی اننگز اختتام کو پہنچی۔
ابھی سری لنکن ٹیم اس نقصان سے سنبھلی بھی نہ تھی کہ اگلے اوور میں نسیم شاہ نے کوشل مینڈس کو کھاتا کھولنے کا بھی موقع نہ دیا اور بابر اعظم کی مدد سے چلتا کردیا۔اس مرحلے پر اوشادا فرنینڈو کا ساتھ دینے تجربہ کار اینجلو میتھیوز آئے اور دونوں کھلاڑیوں نے سکور کو 70تک پہنچا دیا، اس سے قبل کہ یہ شراکت مزید طویل ہوتی، شاہین شاہ آفریدی نے پہلی اننگز کی طرح دوسری اننگز میں بھی محمد رضوان کی مدد سے میتھیوز کو پویلین واپسی پر مجبور کردیا،پاکستان کو چوتھی کامیابی کےلئے زیادہ انتظار نہیں کرنا پڑا اور دنیش چندیمل بھی خاطر خواہ کارکردگی دکھائے بغیر پویلین لوٹ گئے جبکہ ایک اوور بعد یاسر شاہ نے میچ میں پہلی وکٹ حاصل کرتے ہوئے دھننجیا ڈی سلوا کی وکٹیں بکھیر دیں،ڈکویلا اور فر نینڈو نے چھٹی وکٹ کے لیے104رنز جوڑے اور اس دوران ڈکویلا نے اپنی نصف سنچری مکمل کی جسکے بعدوہ 65رنز بنا حارث سہیل کی گیند پر ریورس سویپ کھیلتے ہوئے بولڈ ہوگئے،فرنینڈو نے اپنی پہلی ٹیسٹ سنچری مکمل کی تاہم دن کے آخری اوورمیں پریرا کو نسیم شاہ نے اپنا تیسرا بنا لیا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں