اپنی حدود کا علم ہے،سچ سب کے سامنے آئے گا 215

اپنی حدود کا علم ہے،سچ سب کے سامنے آئے گا بطور جج ہمیشہ اپنے حلف کی پاسداری کی،میرے لیے یہ اہم نہیں کہ دوسروں کا ردِعمل یا نتائج کیا ہو سکتے ہیں۔چیف جسٹس کا فل کورٹ ریفرنس سے خطاب

چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے آج فل کورٹ ریفرنس سے خطاب کیا۔چیف جسٹس نے فل کورٹ ریفرنس سے خطاب کا آغاز سورت النحل سے کیا۔ اپنے اعزاز میں فل کورٹ ریفرنس سے خطاب کرنے سے پہلے چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے خود سے منسوب پرویز مشرف کیس سے متعلق بیان پر وضاحت بھی پیش کی۔انہوں نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایڈیشنل آئی جی نے کہا کہ میں نے میڈیا سے بات کی۔
اٹارنی جنرل نے کہا کہ میں مشرف کیس پر اثر انداز ہوا۔میڈیا پر تاثر دیا گیا کہ میں نے پرویز مشرف کیس فیصلے کی حمایت کی۔یہ مجھے اور عدلیہ کو بدنام کرنے کی گھناؤنی سازش ہے۔چیف جسٹس نے کہا کہ مجھے پر الزام بے بنیاد اور غلط ہے۔ہمیں اپنی حدود کا علم ہے۔سچ کا بول بالا ہو گا۔
سچ سب کے سامنے آئے گا۔جج کو غیر جانبدار ہونے کے ساتھ دل سے شیر ہونا چاہئیے۔

سچ ہمیشہ زندہ رہتا ہے۔انہوں نے کہا میرے اور عدلیہ کے خلاف گھنؤنی مہم چل پڑی ہے۔چیف جسٹس نے کا میرے نزدیک ایک جج کو بے خوف وخطر ہونا چاہئیے۔ایک جج کا دل شیر کی طرح اور اعصاب فولاد کی طرح ہونا چاہئیے۔ کچھ لوگ تمہیں سمجھائیں گے۔وہ تم کو خوف دلائیں گے۔انہوں نے مزید کہا کہ عدالتی چھٹیاں نکال کر 235 دن چیف جسٹس کے منصب پر فائز رہا۔جب میں پیدا ہوا تو میرے منہ میں ایک دانت تھا۔
میرے خاندان میں یہ بات مشہور ہو گئی کہ بچہ بہت خوش قسمت ہو گا۔میں نے ہمیشہ وہ کیا جسے درست سمجھا،بطور چیف جسٹس 11ماہ 337دن ذمے داری نبھائی۔اپنے22 سالہ کرئیر کے دوران مختلف قانونی معاملات کا ہر پہلو سے جائزہ لیا۔قانونی تقاضوں سمیت بغیر خوف اور جانبداری سے فیصلے کیے۔بطور جج ہمیشہ اپنے حلف کی پاسداری کی۔میرے لیے یہ اہم نہیں کہ دوسروں کا ردِعمل یا نتائج کیا ہو سکتے ہیں۔
یاد رہے سپریم کورٹ آف پاکستان کے موجودہ چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ 20 دسمبر کو عہدے سے ریٹائرڈ ہو رہے ہیں چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے 18جنوری 2019ء کو چیف جسٹس کا عہدہ سنبھالا تھا۔ جبکہ سنیارٹی اور مدت ملازمت کے لحاظ سے اگلے چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس گلزاراحمد ہوں گے وہ 21 دسمبر کو عہدے کا حلف اٹھائیں گے اور دو سال چیف جسٹس رہنے کے بعد یکم جنوری 2022ء کو عہدے سے سبکدوش ہوں گے، ان کے بعد مسٹر جسٹس عمر عطائ بندیال 2 فروری 2022ء کو بطور چیف جسٹس سپریم کورٹ آف پاکستان کا عہدہ سنبھالیں گے۔ وزارت قانون نے نئی تقرری کے لئے سمری وزیراعظم کو ارسال کی جا چکی تھی ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں