وزیراعظم عمران خان نے لاہور پی آئی سی واقعہ کا نوٹس لے لیا عمران خان نے چیف سیکریٹری اور آئی جی پنجاب سے رپورٹ طلب کرلی 183

وزیراعظم عمران خان نے لاہور پی آئی سی واقعہ کا نوٹس لے لیا عمران خان نے چیف سیکریٹری اور آئی جی پنجاب سے رپورٹ طلب کرلی

وزیراعظم عمران خان نے لاہور پی آئی سی واقعہ کا نوٹس لے لیا
عمران خان نے چیف سیکریٹری اور آئی جی پنجاب سے رپورٹ طلب کرلی
وزیراعظم عمران خان نے لاہور پی آئی سی معاملے کا نوٹس لے لیا ہے۔ وزیراعظم نے چیف سیکریٹری اور آئی جی پنجاب سے رپورٹ طلب کرلی۔ تفصیل کے مطابق وزیراعظم نے وکلاء کے پی آئی سی پر حملے کا نوٹس لے لیا ہے۔ وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدارنے کہا ہے کہ میں معاملے کو نمٹانے کیلئے لاہور جارہا ہوں۔ وزیراعظم نے وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار سے ٹیلی فونک رابطہ کیا ہے اور فوری طور پر لاہور پہنچنے کی ہدایت کی ہے ۔
عثمان بزدار نے کہا کہ وکلاء اور ڈاکٹروں کے درمیاں صلحہ ہو چکی تھی۔یاد رہے کچھ دیر قبل وکلاء زبرستی پی آئی سے میں داخل ہو گئے۔ پنجاب اسٹیٹوٹ آف کارڈیالوجی میں وکلاء کی جانب سے ہنگامہ آرائی جاری ہے۔کئی گاڑیوں کے شیشے توڑ دئیے گئے ہیں جب کہ وکلاء نے پولیس کی ایک گاڑی کو بھی آگ لگا دی ہے۔
صدر وائی ڈی اے ڈاکٹر عرفان کا کہنا ہے کہ پی آئی سی میں اب تک 6 مریض دم توڑ گئے ہیں۔

جب کہ میڈیا رپورٹ کے مطابق پی آئی سی میں 12 مریض دم توڑ گئے ہیں۔جن میں گلشن بی بی نامی ایک خاتون بھی شامل ہے۔ وکلاء نے صوبائی وزیر فیاض الحسن چوہان پرکو تشدد کا نشانہ بنادیا۔ تفصیل کے مطابق صوبائی وزیر اطلاعات پنجاب فیاض الحسن چوہان پر پی آئی سی کے باہر صوبائی وزیر فیاض الحسن چوہان پر تشدد کیاگیا ہے۔ وکلاء نے فیاض الحسن چوہان کو بالوں سے پکڑ لیا اور نوچنے کی کوشش کی۔
فیاض الحسن چوہان نے کہا ہے کہ مجھے اغواء کرنے کی کوشش کی گئی۔ فیاض الحسن چوہان نے بتایا کہ جن لوگوں نے ظلم کیا ہے ان کیخلاف کارروائی ہوگی۔پی آئی سی میں وکلاء کی جانب سے فائرنگ کی اطلاعات بھی موصول ہو رہی ہیں جب کہ یہ بھی بتایا جا رہا ہے کہ وکلاء کی فائرنگ کے بعد پولیس پیچھے ہٹنے لگی۔وکلاء نے پولیس کی گاڑی کوبھی آگ لگا دی ہے۔بظاہر لگتا ہے کہ پولیس حالات کو کنٹرول کرنے میں ناکام ہو گئی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں