جعلی اکاﺅنٹس اسکینڈل : آصف زرداری اور فریال تالپور کی مشکلات میں اضافہ 196

جعلی اکاﺅنٹس اسکینڈل : آصف زرداری اور فریال تالپور کی مشکلات میں اضافہ

نیب نے 8.3 ارب کی خطیررقم جعلی اکاﺅنٹس سے نکلوانے کا عبوری ریفرنس دائرکردیا
جعلی اکاﺅنٹس اسکینڈل میں گرفتارسابق صدر آصف زرداری اوران کی ہمشیرہ فریال تالپور کی مشکلات میں اضافہ ہوگیا ، نیب نے دونوں بہن بھائی سمیت 14ملزمان کےخلاف عبوری ریفرنس دائرکردیا، ریفرنس میں کہا گیا ہے8.3 ارب کی خطیررقم جعلی اکاﺅنٹس سے نکلوائی گئی، رقم بیرون ملک بھی منتقل ہوتی رہی.

جعلی اکاﺅنٹس اسکینڈل میں بڑی پیش رفت سامنے آئی، قومی احتساب بیورو ( نیب) نے سابق صدر آصف زرداری اوران کی بہن فریال تالپور کے خلاف عبوری ریفرنس دائرکردیا‘ریفرنس نیب راولپنڈی نے اسلام آباد کی احتساب عدالت میں دائر کیا، جس میں بارہ دیگر ملزمان کو بھی نامزد کیا گیا ہے، ریفرنس میں کہا گیا 8اعشاریہ تین ارب کی خطیر رقم جعلی اکاﺅنٹس سے نکلوائی گئی، بینک ریکارڈکے مطابق اکاﺅنٹ زرداری کے لئے استعمال ہوتا تھا،جبکہ بینک اکاﺅنٹ کے ذریعے بیرون ملک رقم بھی منتقل ہوتی رہی.
عبوری ریفرنس میں کہا گیاہے کہ اکاﺅنٹ سے غیرقانونی بارہ سوملین روپے منتقل کرائے گئے،نو سو پچاس ملین روپے دوبارہ آصف زرداری کے زیراستعمال اکاﺅنٹس میں منتقل ہوئے، انورمجید اور دیگرکا معاملے میں اہم کردارہے. ریفرنس میں مزید کہا گیا کہ نجی بینک کے فنڈز کا غلط استعمال کیا گیا، بے نامی دار اے ون انٹرنیشنل کے نام پرزمین خریدی گئی، ملزم مشتاق آصف زرداری کے پرائیویٹ سیکرٹری ہیں اور ان کا سابق صدرکے ساتھ مشترکہ اکاﺅنٹ بھی ہے.
خیال رہے جعلی اکاﺅنٹس میں سابق صدر آصف زرداری اورفریال تالپور پر اب تک فرد جرم عائد نہیں ہوسکی اور دونوں ملزمان جوڈیشل ریمانڈ پر ہیں. دوسری جانب سندھ ہائیکورٹ نے اومنی گروپ کے سربراہ انور مجید کی ایف آئی اے کے خلاف دائر درخواست پر جواب جمع کرانے کے لیے ایف آئی اے کو مہلت دے دی ہے. اومنی گروپ کے سربراہ انور مجید کی ایف آئی اے کے خلاف درخواست کی سماعت سندھ ہائیکورٹ میں ہوئی‘درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ ایف آئی اے سے پوچھا جائے کتنی انکوائریز چلائی جا رہی ہیں، ایف آئی اے انکوائری کے نام پر ہراساں کر رہا ہے.
ایف آئی اے کے وکیل نے کہا کہ متعلقہ حکام سے پوچھ کر بتا سکتے ہیں کہ مزید تحقیقات جاری ہیں یا نہیں کیونکہ میگا منی لانڈرنگ کیس ایف آئی اے نے شروع کیا تاہم اب نیب کو منتقل ہو چکا ہے. ایف آئی اے حکام نے تفصیلی جواب جمع کرانے کے لیے ایک بار پھر مہلت مانگ لی‘عدالت نے ایف آئی اے حکام سے جواب طلب کرتے ہوئے سماعت غیر معینہ مدت تک ملتوی کردی.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں